72

ڈے نائٹ ٹیسٹ کھیلنے سے بھارت کا انکار: ہربھجن اپنے ہی کرکٹ بورڈ پر برس پڑے

نئی دلی: بھارتی کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز آف اسپنر ہربھجن سنگھ ڈے نائٹ ٹیسٹ کھیلنے سے انکار کرنے پر اپنے ہی بورڈ پر برس پڑے۔

ایک تقریب میں شرکت کے موقع پر صحافیوں سے بات کرتے ہوئے ہربھجن سنگھ نے کہا کہ بھارت کو نئی طرز کی کرکٹ لازمی کھیلنا چاہیے، انہیں نہیں معلوم کہ کرکٹ بورڈ ڈے نائٹ ٹیسٹ کیوں نہیں کھیلنا چاہتا اور بورڈ کو کس چیز کا خوف ہے۔

ہربھجن سنگھ نے کہا کہ گلابی گیند سے کھیلنا اتنا مشکل نہیں جتنا بظاہر دکھتا ہے، یہ ایک دلچسپ فارمیٹ ہے اور ہمیں بھی لازمی ڈے نائٹ ٹیسٹ کھیلنا چاہیے۔

ہربھجن سنگھ کا بیان ایسے موقع پر سامنے آیا کہ جب بھارتی کرکٹ بورڈ کی ایڈمنسٹریشن کمیٹی کے چیف ویندود رائے نے کرکٹ بورڈ کے ڈے نائٹ ٹیسٹ نہ کھیلنے کے فیصلے کی کھل کر حمایت کی۔

ویندور رائے کا کہنا تھا کہ اگربھارت سیریز جیتنے کے لیے گلابی گیند سے نہیں کھیلنا چاہتا تو اس میں کوئی غلط بات نہیں، ہر وہ ٹیم جو گراؤنڈ میں آتی ہے وہ کامیاب ہونے کے لیے آتی ہے جب کہ 30 سال قبل بھارت ٹیسٹ میچ صرف ڈرا کرنے کے لیے کھیلتا تھا لیکن آج ہم جیت کے لیے میدان میں اُترتے ہیں۔

بھارت نے آسٹریلیا کے خلاف ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کھیلنے سے انکار کردیا

ہربھجن سنگھ نے کہا کہ بھارت اور آسٹریلیا کے پاس ڈے نائٹ ٹیسٹ میں برابر کے مواقع ہیں اور اسے ہمیں چیلنج کے طور پر لینا چاہیے۔

بھارتی اسپنر کا مزید کہنا تھا کہ ہمارے پاس فاسٹ بولر ہیں جو آسٹریلیا کے لیے مشکلات کھڑی کرسکتے ہیں اور کیا ہمارے بلے باز آسٹریلوی فاسٹ بولر کا سامنا نہیں کرسکتے۔

ہربھجن سنگھ نے کہا کہ آسٹریلیا کے خلاف ڈے نائٹ ٹیسٹ ہمارے لیے چیلنج ہے اور چیلنج کا سامنا کرنے میں کس قسم کا خطرہ ہے، اگر انگلینڈ کے خلاف کالے بادلوں کی موجودگی میں کھیل کر چیلنج قبول کیا جاسکتا ہے تو آسٹریلیا کے خلاف گلابی گیند سے ٹیسٹ کھیل کر چیلنج کو کیوں قبول نہیں کیا جاسکتا۔

یاد رہے کہ بھارت کو رواں سال نومبر سے شروع ہونے والے دورہ آسٹریلیا کے دوران 4 ٹیسٹ، 3 ون ڈے اور 3 ٹی ٹوئنٹی میچز پر مشتمل سیریز کھیلنا ہے۔

دونوں ٹیموں کے درمیان ٹیسٹ سیریز کا پہلا میچ ڈے نائٹ تھا جسے بھارتی انکار کے بعد تبدیل کردیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں