109

ٹیکساس اسکول فائرنگ میں جاں بحق پاکستانی طالبہ سبیکا کی نمازجنازہ ہوسٹن میں ادا

ہوسٹن: امریکی ریاست ٹیکساس کے ایک ہائی اسکول میں ساتھی طالب علم کی فائرنگ سے جاں بحق ہونے والی پاکستانی طالبہ سبیکا عزیز شیخ کی نماز جنازہ ہوسٹن میں ادا کردی گئی۔

سبیکا شیخ کی نماز جنازہ ہوسٹن کے علاقے شوگر لینڈ کی مسجد صابرین میں نماز ظہر کے بعد ادا کی گئی، جس میں پاکستانی کمیونٹی اور مقامی حکام نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

ہیوسٹن-کراچی سسٹر سٹی کےصدر سعید شیخ بھی نماز جنازہ میں شریک ہوئے۔

سبیکا کی نماز جنازہ ہوسٹن کے علاقے شوگر لینڈ کی مسجد صابرین میں نماز ظہر کے بعد ادا کی گئی—۔ فوٹو/ اے ایف پی
اس موقع پر دعائیہ تقریب میں میئر ہوسٹن سلویسٹر ٹنر، رکن کانگریس آل گرین، ٹیکساس سے رکن کانگرس شیلا جیکسن، پاکستانی قونصل جنرل عائشہ فاروقی سمیت خواتین کی بھی بڑی تعدادشریک ہوئی۔

سبیکا کی نماز جنازہ کےموقع پر مسجد حمزہ کے سامنے گن کنٹرول کے خلاف مظاہرہ بھی کیا گیا۔

میئر ہوسٹن نے اس حوالے سے اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ ‘سبیکا ایک شیخ فیملی کی بچی تھی، لیکن وہ ہماری بھی بچی تھی، بالکل ان بچوں کی طرح جو اس واقعے میں اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے’۔

انہوں نے نماز جنازہ میں شرکت کی دعوت دینے پر پاکستانی قونصل جنرل عائشہ فاروقی کا بھی شکریہ ادا کیا۔

امریکا میں سبیکا عزیز شیخ، جیسن کوگ برن اور جولین کوگ برن کے گھر پر مقیم تھیں، انہوں نے بھی نماز جنازہ میں شرکت کی۔

پاکستانی طالبہ سبیکا سمیت ٹیکساس اسکول فائرنگ میں جاں بحق افراد کی یاد میں شمعیں روشن ہیں—۔ فوٹو/ رائٹرز
اس موقع پر جیو نیوز سے خصوصی بات چیت میں پاکستانی قونصل جنرل عائشہ فاروقی نے بتایا کہ سبیکا کی میت منگل کی صبح کراچی پہنچے گی اور اس سلسلے میں تمام اخراجات پاکستانی قونصل خانہ ادا کر رہا ہے، میت کے ہمراہ سبیکا کی کزن شہیرا بھی ہوں گی۔

سبیکا کی میت نجی ایئرلائن کے ذریعے پاکستان لائی جائے گی، تاہم موسم کی خرابی کے باعث پرواز 2 گھنٹے تاخیر کا شکار ہوئی۔

جاں بحق طالبہ کی کزن شہیرا نے جیو نیوز سے گفتگو میں بتایا کہ ‘سبیکا کی والدہ سکتے کی کیفیت میں ہیں، ہم شاید اس صدمے سے ساری زندگی نہ نکل پائیں’۔

ٹیکساس ہائی اسکول فائرنگ

کراچی کی رہائشی 17 سالہ سبیکا عزیز شیخ امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے کینیڈی لوگریوتھ ایکسچینج اینڈ اسٹڈی اسکالر شپ پروگرام کے تحت گزشتہ برس 21 اگست کو 10 ماہ کے لیے امریکا گئی تھیں اور 9 جون کو انہیں وطن واپس آنا تھا۔

ٹیکساس فائرنگ: یقین نہیں آرہا کہ سبیکا چلی گئی، والد

وہ ٹیکساس کے شہر سانتافی کے ایک ہائی اسکول میں زیر تعلیم تھیں، جہاں جمعہ (18 مئی) کو اسکول کے ہی ایک طالب علم کی فائرنگ سے وہ چل بسیں۔

فائرنگ کے نتیجے میں 9 طالب علموں اور ایک استاد سمیت 10 افراد ہلاک اور 10 زخمی ہوئے تھے۔

فائرنگ کرنے والے 17 سالہ حملہ آور دمیتری پارگورٹسز کو گرفتار کرلیا گیا تھا، جو اسی اسکول کا طالب علم ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں