133

ہائر ایجو کیشن کمیشن کا چار سال کا مالی و تعلیمی آڈٹ کرایا جائے، ڈاکٹر کلیم اللہ

کراچی(اسٹاف رپورٹر) فیڈریشن آف آل پاکستان اکیڈمک سٹاف ایسو سی ایشن کی جانب سے مطالبہ کیا گیاہے کہ ہائر ایجو کیشن کمیشن کا گزشتہ چار سال کا مالی و تعلیمی آڈٹ کروایا جائے ۔اس حوالے سے فیڈریشن کے مرکزی صدر ڈاکٹر کلیم اللہ بریچ ، صدر بلوچستان و ممبر ایگزیکٹو کمیٹی ڈاکٹر فرید اچکزئی نے ہائر ایجو کیشن کمیشن کی گزشتہ چار سالہ کار کردگی پر اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ گزشتہ چار سالوں سے اعلیٰ تعلیمی شعبہ مسلسل تنزلی کا شکار ہے، اسی عرصہ کے دوران اعلیٰ تعلیمی شعبہ میں کئی مالی و تعلیمی بے ضابطگیوں کا بھی انکشاف ہو اہے ،ایچ ای سی میں اقربا ء پروری عروج پر رہی جبکہ چار سال پہلے تک دنیا کی پانچ سو بہترین جامعات میں پاکستان کی 5 جامعات شامل تھیں لیکن ان چار سالوں کے دوران ہماری جامعات عالمی رینکنگ میں گراوٹ کا شکار رہیں اور جامعات کی عالمی درجہ بندی جاری کرنے والے ادارے کیو ایس کی رینکنگ میں بھی پاکستانی جامعات مسلسل گراوٹ کا شکار رہیں۔انہوں نے کہا کہ انتہائی افسوس کی بات ہے کہ ہائر ایجو کیشن کمیشن کے 90بیلین سے زائد کے بجٹ کے لئے ایچ ای سی کی گورئنمنٹ باڈی کی جانب سے اپروول ہی نہ مل سکی ۔چھوٹے صوبے با لخصوص بلوچستان ایچ ای سی کے سالانہ بجٹ میں اپنے حصے سے محروم رہا جبکہ حکومتی جماعت کے ایک وزیر کے ضلع میں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں