14

افغان صدر کا وزیردفاع، داخلہ اور چیف خفیہ ایجنسی کے استعفے قبول کرنے سے انکار

کابل: افغان صدر اشرف غنی نے وزیر دفاع، وزیر داخلہ اور خفیہ ایجنسی کے سربراہ کا استعفیٰ قبول کرنے سے انکار کردیا جب کہ مشیر قومی سلامتی کا استعفیٰ قبول کرلیا۔

غیرملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سیکیورٹی امور پر اختلافات کے باعث گزشتہ روز افغان وزیر دفاع، وزیر داخلہ، خفیہ ایجنسی کے سربراہ اور مشیر قومی سلامتی نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

حکومتی ترجمان ہارون چکنسوری کا کہنا ہے کہ صدر اشرف غنی نے مستعفی وزرا اور چیف خفیہ ایجنسی کو کام جاری رکھنے کی ہدایت کی ہے تاہم انہوں نے مشیر قومی سلامتی حنیف اتمر کا استعفیٰ قبول کرلیا۔

یاد رہے کہ استعفیٰ دینے والوں میں مشیر قومی سلامتی محمد حنیف اتمر بھی شامل تھے جو صدر کے بعد سب سے طاقتور عہدے پر براجمان تھے۔

محمد حنیف اتمر کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ وہ آئندہ سال ہونے والا صدارتی انتخاب لڑنے کے خواہاں ہیں۔

افغان میڈیا کے مطابق محمد حنیف اتمر کے استعفے کے بعد صدر اشرف غنی نے امریکا میں تعینات سفیر حمداللہ محب کو قومی سلامتی کا مشیر مقرر کردیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں