17

’’اعزازی‘‘ چیئرمین پی سی بی کیلیے مراعات کی بھرمار

کراچی: ’’اعزازی‘‘ چیئرمین پی سی بی کیلیے مراعات کی بھرمار ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کی سربراہی پانے کیلیے ملک میں بڑے بڑے لوگ کوشش کرتے دکھائی دیتے ہیں، ایک بار عہدہ چھوڑنے والا زندگی بھر اسے دوبارہ پانے کی تمنا رکھتا ہے، چیئرمین ہر وقت میڈیا کی توجہ کا مرکز بنا رہتا جبکہ اربوں روپے کا بجٹ بھی اس کے پاس ہوتا ہے، مفت کے غیرملکی دورے اور دیگر سہولتیں بھی اسے حاصل ہوتی ہیں۔

نمائندہ ’’ایکسپریس‘‘ کے پاس موجود دستاویز کے مطابق چیئرمین پی سی بی کو کوئی تنخواہ نہیں ملتی مگر اس کے بغیر ہی لاکھوں روپے ہر ماہ اس پر خرچ ہو سکتے ہیں،اسے مکمل سہولتوں سے آراستہ رہائش یا اس مد میں ایک لاکھ روپے ماہانہ دیے جاتے ہیں، ایک 3500 سی سی کار بمعہ ڈرائیور بھی استعمال کیلیے ملتی ہے، شہر سے باہر جانے پر بھی یہی سہولت حاصل ہوتی ہے۔ وہ بجلی، پانی اور گیس کے گھریلو بلوں کی ادائیگی یا اس مد میں 40 ہزار روپے ماہانہ لے سکتا ہے۔

چیئرمین پی سی بی کو سیکیورٹی گارڈز سمیت چار گھریلو ملازمین فراہم کیے جاتے ہیں، گھر پر ایک لینڈ لائن اور ایک موبائل فون بھی بورڈ کے سربراہ کو ملتا ہے،اپنے اور اہلیہ کیلیے وہ تمام میڈیکل سہولتیں بھی پانے کا اہل ہوتا ہے۔

چیئرمین پی سی بی کو آفیشل دوروں پر اہلیہ کے ساتھ فرسٹ کلاس میں فضائی سفر کی سہولت حاصل ہوتی ہے،وہ فائیو اسٹار ہوٹلز میں قیام کرتا ہے۔ اس دوران ڈومیسٹک دورے پر یومیہ 10 ہزار اور غیر ملکی ٹور پر رہائش کے ساتھ 300 (پاکستانی تقریباً37ہزار روپے) جبکہ بغیر رہائش650 ڈالر یومیہ (تقریباً پاکستانی 80 ہزار روپے)الاؤنس دیا جاتا ہے، بزنس انٹرٹینمنٹ کی مد میں چیئرمین بغیر کسی حد کے رقم خرچ کر سکتا ہے۔

دوسری جانب نئے ممکنہ چیئرمین احسان مانی ان سہولتوں سے زیادہ فائدہ اٹھانے کا ارادہ نہیں رکھتے، ان کی کوشش ہوگی کہ سادگی اختیار کی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں