22

پاکستان نے آخری ٹی ٹوئنٹی میں جنوبی افریقہ کو 27 رنز سے شکست دے دی

پاکستان نے جنوبی افریقہ کے خلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز کے آخری میچ میں 27 رنز سے کامیابی حاصل کرلی اور ٹیم سیریز میں کلین سوئپ سے بچ گئی۔

سنچورین میں کھیلے جارہے آخری ٹی ٹوئنٹی میں جنوبی افریقہ کے کپتان ڈیوڈ ملر نے ٹاس جیت کر مہمان پاکستان کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔

بابراعظم اور فخرزمان نے جارحانہ انداز میں بلے بازی کی لیکن یہ شراکت 24 رنز پر اس وقت گری جب بابرعظم 11 گیندوں میں 5 چوکوں کی مدد سے 23 رنز بنانے کے بعد مورس کی گیند پر ملان کو کیچ دے بیٹھے۔

فخرزمان کا ساتھ دینے کے لیے محمد رضوان کو دوسری پوزیشن پر بیٹنگ کے لیے بھیج دیا گیا اور دونوں بلے بازوں نے اسکور کو 47 رنز تک پہنچایا لیکن فخر زمان مزید آگے نہ بڑھ سکے اور 17 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے تاہم شعیب ملک اور رضوان نے اسکور کو مزید آگے بڑھایا۔

پاکستان کی تسری وکٹ 89 رنز پر گری جب محمد رضوان 26 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے، 92 رنز پر شعیب ملک بھی آؤٹ ہوئے جنہوں نے 18 رنز بنائے تھے۔

آصف علی نے 2 چھکوں کی مدد سے 25 رنز بنائے لیکن ہینڈرکس کے سامنے حسین طلعت 3، عماد وسیم 19 اور فہیم اشرف 4 رنز بنا سکے اور پویلین لوٹ گئے۔

شاداب خان نے آخری لمحات میں 3 چھکوں کی مدد سے جارحانہ بلے بازی کرتے ہوئے پاکستان کو ایک اچھے مجموعے تک پہنچایا جبکہ محمد عامر صفر پر آؤٹ ہوئے تاہم شاہین شاہ آفریدی کھاتہ کھولے بغیر ناٹ آؤٹ رہے۔

پاکستان نے مقررہ 20 اوورز میں 9 وکٹوں پر168 رنز بنا لیے۔

شاداب خان نے آؤٹ ہوئے بغیر 22 رنز بنائے۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے ہینڈرکس نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور 4 وکٹیں حاصل کیں اور کرس مورس نے 2 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

شاہین شاہ آفریدی نے ریزا ہینڈرکس کو 5 رنز پر آوٹ کرکے پاکستان کو اہم وکٹ دلادی جس کےبعد عماد وسیم نے دوسرے اوپنر ملان کو 14 رنز پر آؤٹ کردیا۔

ڈوسن نے ایک مرتبہ پھر اچھی بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 41 رنز بنائے تاہم فہیم اشرف نے انہیں کپتان شعیب ملک کے ہاتھوں کیچ کرادیا جبکہ دوسرے اینڈ سے کلاسان 2 اور کپتان ڈیوڈ ملر 13 رنز بنا کر آوٹ ہوئے۔

شاداب خان نے ملر کو آؤٹ کرکے قومی ٹیم بڑی کامیابی دلادی جس کے بعد فیلکوایو کو 80 کے مجموعے پر آوٹ کرکے راستے آسان بنادیا۔

کرس مورس نے مشکل وقت میں وکٹ پر کھڑے ہو کر ٹیم کو سنبھالنے کی کوشش کی لیکن ہینڈرکس 3 اور جونیئر ڈالا 5 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

جنوبی افریقہ کا اسکور 129 پر پہنچا تھا تو سمپاملا بھی فہیم اشرف کی وکٹ بن گئے۔

ڈیوڈ ملر نے شاندار نصف سنچری مکمل کرتے ہوئے 55 رنز بنائے اور تبریز شمسی نے آخری گیند تک ان کا ساتھ دیا تاہم مقررہ اوورز تک 9 وکٹوں کے نقصان پر صرف 141 رنز بن سکے۔

پاکستان نے ٹی ٹوئنٹی سیریز میں پہلی کامیابی 27 رنز سے حاصل کی اور یوں کلین سوئپ سے خود بچالیا۔

محمد عامر نے سب سے زیادہ 3، شاداب خان اور فہیم اشرف نے 2،2 وکٹیں حاصل کیں، عماد وسیم اور شاہین شاہ آفریدی نے بھی ایک، ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

قبل ازیں پاکستان نے جنوبی افریقہ کے خلاف ٹی ٹوئنٹی میچ میں کلین سوئپ سے بچنے کے لیے آخری میچ میں حسن علی اور عثمان شنواری کی جگہ فہیم اشرف اور محمد عامر کو ایک مرتبہ پھر ٹیم میں شامل کر لیا۔

دوسری جانب جنوبی افریقہ نے گزشتہ میچ کی فاتح ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی۔

ڈیوڈ ملر نے ٹاس جیتنے کے بعد بات کرتے ہوئے کہا کہ ‘عام طور پر یہاں ہدف کا تعاقب کرنا چاہیں گے کیونکہ یہ وکٹ اچھی ہے اور ہم جلد سے جلد پاکستانی ٹیم کو آؤٹ کرنے کی کوشش کریں گے’۔

شعیب ملک کا کہنا تھا کہ ‘ہم ٹاس ہار گئے لیکن میں آج پہلے بیٹنگ کرنا چاہتا تھا، ہم نے گزشتہ دونوں میچوں میں اچھا کھیل پیش کیا’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘یہ آخری میچ ہے اور ہم جیت کے ساتھ دورے کا اختتام کرنا چاہتے ہیں لیکن اس کا انحصار ہمارے آغاز پر ہے تاہم گزشتہ میچوں میں ہمارے ابتدائی تینوں بلےبازوں نے اچھا کھیلا اور اس میچ میں بھی ہمیں ان سے اسی طرح کی توقعات ہیں’۔

جنوبی افریقہ کی ٹیم نے ٹی ٹوئنٹی سیریز کو ابتدائی دو میچوں میں کامیابی کے ساتھ اپنے نام کرلیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں