20

پاکستانی بلےبازوں کی بہترین کارکردگی کے باعث انگلینڈ صرف 12 رنز سے کامیاب

انگلینڈ نے 5 میچوں کی سیریز کے دوسرے ون ڈے میں پاکستان کو سنسنی خیز مقابلے کے بعد 12 سے زیر کرکے سیریز میں 1-0 کی برتری حاصل کرلی جبکہ فخرزمان کی شان دار سنچری کے علاوہ بابراعظم اور آصف علی نے بھی ذمہ دارانہ بلےبازی کا مظاہرہ کیا۔

ساؤتھمپٹن میں کھیلے جا رہے سیریز کے دوسرے میچ میں پاکستان کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر میزبان ٹیم کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔

میزبان ٹیم کے اوپننگ بلے بازوں جیسن رائے اور جونی بیئرسٹو نے سرفراز احمد کی تمام حکمت عملی پر پانی پھیرتے ہوئے پہلی وکٹ پر سنچری پارٹنرشپ قائم کردی۔

قومی ٹیم کو پہلی کامیابی 115 کے مجموعے پر ملی جب جونی بیئرسٹو 51 رنز بنانے کے بعد شاہین آفریدی کی گیند پر فخر زمان کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔

میزبان ٹیم نے ایک وکٹ کے نقصان پر 29ویں اوور میں 170 رنز بنائے تھے کہ بارش کے باعث میچ روکنا پڑا، اس موقع پر جیسن رائے 83 اور جو روٹ 28 رنز پر ناٹ آؤٹ تھے۔

بارش تھمتے ہی جب میچ کا دوبارہ آغاز ہوا تو حسن علی نے 87 رنز پر کھیلنے والے جیسن روئے کو آوٹ کرکے انگلینڈ کی دوسری وکٹ گرادی۔

بٹلر نے 9 چھکے اور 4 چوکے لگائے—فوٹو:اے پی
بٹلر نے 9 چھکے اور 4 چوکے لگائے

جو روٹ اور کپتان آئن مورگن نے تیسری وکٹ کی شراکت میں ٹیم کا اسکور 211 رنز تک پہنچا دیا جس کے بعد جوروٹ 40 رنز کی اننگز کھیل کر یاسر شاہ کی گیند پر حارث سہیل کو کیچ دے کر پویلین لوٹ گئے۔

انگلینڈ نے 300 کا ہندسہ 46 ویں اوور میں حاصل کرلیا جب مورگن اور جوز بٹلر نے جارحانہ انداز میں اپنی نصف سنچریاں بھی مکمل کیں۔

مورگن اور بٹلر کے درمیان تیسری وکٹ کی شراکت میں 162 رنز بنے جس میں بٹلر کی صرف 50 گیندوں پر جارحانہ سنچری بھی شامل تھی، جنہوں نے مجموعی طور پر 9 چھکے اور 6 چوکے لگائے اور آخر تک آوٹ نہیں ہوئے۔

انگلینڈ نے مقررہ اورز میں 3 وکٹوں پر 373 رنزبنا کر پاکستان کو ایک مشکل ہدف دے دیا۔

جوزبٹلر 55 گیندوں پر 110 اور مورگن 48 گیندوں پر 6 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 71 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

شاہین شاہ آفریدی، یاسر شاہ اور حسن علی نے ایک، ایک وکٹ حاصل کی۔

پاکستان نے ہدف کے تعاقب میں پہلی وکٹ 92 کے اسکور پر گرائی جب امام الحق 35 رنز بنا کر معین علی کی گیند پر آؤٹ ہوئے جس کے بعد فخرزمان اور بابراعظم نے ذمہ داری سے اسکور آگے بڑھایا اور ٹیم کو اچھی پوزیشن پر لاکھڑا کیا۔

فخرزمان نے شراکت کے دوران اپنی سنچری بھی مکمل کی جس کے لیے انہوں نے 84 گیندوں کا سامنا کیا جبکہ شراکت میں دونوں بلے بازوں نے 135 رنز کا اضافہ کیا۔

پاکستان کو طویل شراکت کے بعد تیسرے نقصان فخر زمان کی صورت میں اٹھانا پڑا جب وہ ٹیم کے مجموعی اسکور 227 رنز پر 138 کی اننگز کھیل کر ووکس کی گیند پر آوٹ ہوئے۔

بابراعظم بھی فخرزمان کے آؤٹ ہوتے ہی پویلین لوٹ گئے جنہوں نے 51 رنز بنائے تھے۔

پاکستان نے مقررہ اورز میں 7 وکٹوں پر 361 رنز بنائے اور میچ صرف 12 رنز سے ہار گئے۔

ٹاس کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے پاکستان ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ ہمیں مثبت کرکٹ کھیلنی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ وہ حریف ٹیم کو 270 سے 280 کے درمیان محدود کرکے ہدف کو حاصل کرنے کی پوری کوشش کریں گے۔

اس موقع پر انگلینڈ کے کپتان آئن مورگن کا کہنا تھا کہ وکٹ اچھی ہے، پہلے بیٹنگ کرنے میں کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

دوسرے ون ڈے کے لیے فاسٹ باؤلر محمد عامر کی جگہ لیگ اسپنر یاسر شاہ کو قومی ٹیم میں شامل کیا گیا۔

یاد رہے کہ پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان کھیلا گیا سیریز کا پہلا میچ بارش کی نذر ہوگیا تھا جو بارش کی مسلسل مداخلت کے باعث ختم کر دیا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں