76

میرے ہم وطنو! ایک اور منتخب وزیراعظم گرفتار: مریم کا شاہد خاقان کی گرفتاری پر ردعمل

مسلم لیگ ن کی مرکزی قیادت نے نیب کی جانب سے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے سیاسی انتقام قرار دیا ہے۔

نیب نے ایل این جی کیس میں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو آج طلب کیا تھا تاہم پیش نہ ہونے پر انہیں لاہور میں ٹھوکر نیاز بیگ سے گرفتار کر لیا گیا۔

مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے سیاسی انتقام قرار دیا ہے۔

شہباز شریف نے کہا کہ نیب کا ادارہ عمران نیازی کے ہاتھ میں آلہ کار بنا ہوا ہے اور نیب کو سیاسی انتقام کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے۔

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف نے کہا کہ ایسے اوچھے ہتھکنڈوں سے ہمارے حوصلے پست نہیں کیے جا سکتے۔

ن لیگ کی نائب صدر مریم نواز نے سوشل میڈیا پر شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے پاکستانی عوام کے نام اپنے پیغام میں لکھا کہ آپ کے ووٹ سے منتخب ہونے والا ایک اور وزیراعظم گرفتار ہو گیا۔

مریم نواز نے مزید لکھا کہ جو عوام کے ووٹ سے آئے گا تو کیا یہی لاقانونیت، توہین اور ناانصافی اس کا مقدر بنے گی۔

مسلم لیگ ن کی نائب صدر نے نیب کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ آپ کا منتخب نمائندہ نیب جیسے بدنام ادارے کی ایک فوٹو کاپی کی مار ہے۔

سابق گورنر سندھ محمد زبیر نے کہا کہ شاہد خاقان عباسی آج بھی نیب میں پیش ہوئے تھے، جو کچھ ماحول ہے وہ عمران خان کی ایماء پر ہے، وہ جس اسٹیج پر لوگوں کو گرفتار کرا رہے ہیں اس حساب سے تو آدھی پی ٹی آئی اندر ہونی چاہیے۔

رہنما ن لیگ نے کہا کہ ہمیں گرفتار کریں گے تو کیا پاکستان ترقی کرنا شروع ہوجائے گا، چیلنج کرتا ہوں کہ شاہد کا کوئی کیس اُن کے پاس نہیں ہے، صرف ایل این جی معاہدے کا کیس بنایا گیا ہے، اگر ان کے پاس کوئی ثبوت ہوتے تو عمر ایوب بتاتے یہ معاہدہ ہوا تھا اور اس میں یہ کمزوریاں تھیں۔

مسلم لیگ ن کے سیکریٹری جنرل احسن اقبال نے نیب کو ’ن لیگ اکاؤنٹیبلٹی بیورو‘ قرار دیتے ہوئے کہا ایک غیر تصدیق شدہ فوٹو کاپی پر گرفتار کر لیا گیا لیکن پی ٹی آئی کی چھتری کے نیچے میگا کرپشن اسکینڈل کو نہیں چھیڑا جا رہا۔

بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے سیکریٹری جنرل احسن اقبال نے کہا کہ آج پاکستان میں جمہوریت کے لیے ایک اور سیاہ دن ہے، عوام کے ووٹوں سے منتخب ہونے والے ایک اور وزیراعظم کو نیب گردی اور پسپائی گردی کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

ن لیگ کے سیکریٹری جنرل نے کہا میں نے اسمبلی میں بھی کہا تھا کہ پاکستان کی 72 سالہ تاریخ میں کوئی ایسی حکومت نہیں آئی جس کو ملکی اداروں کی جانب سے ایسی ٹھنڈی ہوا ملی ہو لیکن اس کے باوجود یہ حکومت اڑ نہیں پا رہی۔

احسن اقبال نے کہا کہ اگر اس حکومت کا جہاز نہیں اڑ پا رہا تو اس میں ہمارا کیا قصور ہے، اصل بات یہ ہے کہ کپتان ناتجربہ کار، نالائق ہے جس کی سزا اپوزیشن اور ملک کے 20 کروڑ عوام کو دی جا رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کے لیے پیغام ہے کہ ہم سب کو پکڑ کر جیل میں ڈال دو لیکن پھر بھی ہم تمھارے ان اوچھے ہتھکنڈوں سے ڈرنے والے نہیں ہیں کیونکہ ہم نے مشرف کی وردی کا بھی مقابلہ کیا ہے اور دہشت گردوں کی گولیاں بھی کھائی ہیں۔

رہنما ن لیگ نے کہا کہ پاکستان کے جتنے بڑے اسکینڈل شاید اس حکومت کے ہیں کسی اور حکومت کے نہیں ہیں، جو اس حکومت کے اسکینڈل سامنے لاتا ہے اسے گرفتار کر لیا جاتا ہے۔

احسن اقبال نے کہا کہ ہم عمران خان نیازی کو پاکستانی ہٹلر نہیں بننے دیں گے، پاکستانی قوم نے باوردی آمر کو ہٹلر نہیں بننے دیا تو آپ کیا چیز ہیں، آپ کو ایک سلیکٹڈ ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں