504

نیوزی لینڈ کا دورہ اور جے ایف تھنڈر

نیوزی لینڈ کا دورہ اور جے ایف تھنڈرپاکستان نے برطانیہ کے دباو پر ارجنٹائین کے ساتھ جے ایف تھندڑ کی ڈیل منسوخ کرنے سے انکار کیانیوزی لینڈ نے برطانیہ کے دباو پر سیریزبغیر کسی وجہ کے منسوخ کر کے تاج برطانیہ کے حلف کی پاسداری کی تاریخ میں امریکا نے ناگا ساکی اور ہیرو شیما پر ایٹم بم گراکر ایٹمی جنگ شروع کی تھیفائیو آئی نے پنڈی کرکٹ سٹیڈیم پر سپورٹس بم گرا کر نئے دور کی جنگ کا آغاز کر دیا
نیوزی لینڈ کی جانب سے پاکستان کے دورہ کے پراسرار انکار کے  بعد انگلینڈ نے بھی پاکستان کے ساتھ سیریز کھیلنے سے انکار کر دیا ہے جبکہ آئندہ چند دنوں میں آسٹریلیا کی ٹیم بھی پاکستان آنے سے انکار کرے گی دنیا کی اکثریت کو ابھی تک علم ہی نہیں کہ اس ساری سازش کے پیچھے محرکات کیا تھے آج ہم آپ کو اس حقیقت سے پردہ آٹھانے کی کوشش کرتے ہیں1982میں ارجنٹائن اور یوکے کے درمیان جزائیر فالک لینڈ پر قبضہ کے حوالے سے دو اپریل سے 14جون تک جنگ ہوئی اور یہ جنگ یو کے نے جیت لی اور دنیا نے جزائیر فالک لینڈ پر یوکے کے قبضہ کو تسلیم کر لیا یہ جزائیر 12000مربع میل اور 776چھوٹے چھوٹے جزائیرپر محیط ہیں ماضی میںان جزائیر پر کبھی فرانس کبھی ارجنٹائین اور کبھی یو کے کا قبضہ رہا 1833سے یو کے ان جزائیر پر قابض ہے وہاں کی حکومت مقامی ہے لیکن برطانیہ نے ان جزائیر کی دفاع اور فارن آفیرکی ذمہ داری لے رکھی تھی 1982میں ارجنٹائین نے ان جزائیر پر پھر قبضہ کر لیا اور دو ماہ بعد برطانیہ نے جنگ شروع کی اور جیت کر فالک لینڈ جزائیر پر اپنا قبضہ دوبارہ حاصل کر لیا  لیکن پاکستان وہ واحد ملک ہے جس نے آج تک یوکے کے فالک لینڈ پر قبضہ کو تسلیم نہیں کیااور ارجنٹائین نے ہمیشہ سے پاکستان کی مسئلہ کشمیر سمیت ہر معاملہ پر حمایت کی ہے دونوں ملکوں کے درمیان سفارتی تعلقات اس وقت مثالی ہیں
اب ہم آپکو بتاتے ہیں کہ معاملہ کیا ہوا رجنٹائین نے اپنی معیشت کو بہتر کیا اور اپنے آپ کو طاقتور بنانے کا ارادہ کیا اور اس نے2015میں سویڈن سے جے اے ایس 39گرپن فائیٹر جنگی طیارے خریدنے کے معاہدہ کرنے کی کوشش لیکن سویڈن نے برطانیہ کے دباو پر وہ ڈیل منسوخ کر دی۔اس دوران امریکا نے ایف سولہ جبکہ کئی ممالک نے ارجنٹائین کو جنگی طیارے فروخت کرنے بارے پیشکش کی لیکن ارجنٹائں نے پاکستان سے 12جے ایف 664ملین ڈالر میں تھنڈر طیارے خریدنے میں دلچسپی کا اظہار کیا ایسے میں جب برطانیہ کو علم ہوا تو سویڈن کی طرح برطانیہ نے پاکستان پر بھی پریشر بڑھایا اور انکے سیکریڑی آف سٹیٹ اس حوالے سے بھاری وفد کے ہمراہ  پاکستان آئے اور پاکستان کو باور کروایا کہ ارجنٹائین کا دنیا میں صرف ایک ملک دشمن ہے اور وہ برطانیہ ہے اور اگر آپ انہیں طیارے دینگے تو ہمارے خلاف ہی استعمال ہونگے لیکن کہا جاتا ہے کہ پاکستان نے برطانیہ کو بھی ابسولوٹلی ناٹ یعنی مکمل سرخ جھنڈی دکھائی اور برطانیہ نے اس سلسلہ میں پاکستان کو ریڈ لسٹ سے بھی نکال دیا  اور فیٹف سمیت کئی مزید لالچ بھی دیے لیکن کہا جاتا ہے کہ اس دوران پاکستان کی ارجنٹائن کے ساتھ ڈیل حتمی مراحل میں داخل ہو گئی اور اس دوراں بھارت نے برطانیہ کو ورغلایا اور انہیں پاکستان کے دورہ سے اور نیوزی لینڈ کے دورہ سے روکا اور ایک خود ساختہ فائیو آئی کی رپورٹ تیار کروائی اور سب کو علم ہے کہ فائیو آئی ممالک میں امریکہ برطانیہ ،کینیڈہ آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ شامل ہیں امریکا کو ہم نے پہلے ہی سرخ جھنڈی مکمل ناں کر دی تھی اور یہ بھی سب کو علم ہے کہ کینیڈہ نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا میں وزیر اعظم انکے اپنے ہیں لیکن وہ حلف تاج برطانیہ کا ہی اٹھاتے ہیں یعنی یہ تینوں ممالک کامن ویلتھ کے ممالک تو ضرور ہیں لیکن حکم ابھی بھی تاج برطانیہ یعنی ان تین ممالک کینیڈہ نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کا بادشاہ ابھی بھی برطانیہ کا ہی ہوتا ہے  اب آپ کو سمجھ آ ہی گئی ہو گی کہ اصل لڑائی کھیلوں کے میدانوں میں سیکورٹی کی نہیں نہیں بلکہ یہ لڑائی اب ایک سیاسی جنگ بن گئی ہے اور کھیلوں کے میدانوں میں اب سیاست نہیں بین القوامی سیاست کا راج ہونے جا رہا ہے پہلے جنگیں ٹینکوں اور طیاروں سے جیتی جاتی تھیں اور پھر رفتہ رفتہ یہ جنگیں کھیلوں کے میدانوں میں لڑی جانے لگیں لیکن اب کھیلوں کے میدانوں میں بین القوامی سیاست نے ہاتھ رکھ لیا ہے اور لگ رہا تھا کہ ففتھ جنریشن کے اس دور میںجہاں ہیرو شیما اور ناگا ساکی پر بمباری ہوتی تھی اب کھیلوں کے میدان بھی ناگا ساکی اور ہیرو شیما  ہی بنیں گے لیکن تاریخ یاد ررکھے گی کہ کھیلوں کے میدان ویران کرنے کا اغاز پھر سے پنڈی سے ہوا ہے اور پنڈی کرکٹ سٹیڈیم امریکا کی جانب سے ایک نیا ناگا ساکی اور ہیرو شیما کے طور پر جانا جاے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں