0

جنرل قاسم سلیمانی ایسا کیا کام کر رہے تھے جس کی بھنک امریکی خفیہ ایجنسیوں کے پڑی

اہور (مانیٹرنگ ڈیسک )جنرل قاسم سلیمانی ایسا کیا کام کر رہے تھے جس کی بھنک امریکی خفیہ ایجنسیوں کے پڑی اور انہیں ہنگامی طور پر مروا دیا گیا ، سعودی عرب کو چونکا دینے والی خبر ۔۔۔ سینئیر صحافی ہارون الرشید کا کہنا ہے کہ قاسم سلیمانی سعودی عرب کے حوالے سے خط لے کر جا رہے تھے،اس میں تھا کہ سعودی عرب کےساتھ جاری کشیدگی کو

کیسے کم کیا جائے۔اس خط میں اس خواہش کا اظہار کیا گیا تھا کہ ایران اور سعودی عرب کے مابین کشیدگی کو کم کیا جائے،اور یہ بات بھی ممکن ہے کہ اس بات کا علم اسرائیل اور امریکا کے ایجنسیوں کو معلوم ہو،امریکا نے کہا کہ قاسم سلیمانی کو جنگ سے بچنے کے لیے قتل کیا گیا،لیکن اصل بات یہ ہے کہ قاسم سلیمانی ایران اور سعودی عرب کے مابین کشیدگی کم کرنا چاہتے تھے۔
ہاورن الرشید نے مزید کہا کہ امریکا پورے مڈل ایسٹ کو اسرائیل کے حوالے کرنا چاہتا تھا کہ امریکا پورے مڈل ایسٹ پر قبضہ کر لے۔
ہماری معشیت پر بھی ان کا قبضہ ہو۔ یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے بغداد ایئرپورٹ پر ہونے والے حملے میں جنرل قاسم سلیمانی کو قتل کر دیا گیا تھا۔ آج اس واقع کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عام پر آگئی تھی۔ ویڈیو کے منظر عا م پر آتے ہی ویڈیو وائرل کر دی گئی تھی۔
ویڈیو میں دیکھا جا سکتا تھا کہ جنرل قاسم سلیمانی کو ایک ڈرون حملے میں بغدار ایئرپورٹ پر مارا گیا تھا ۔ سی سی ٹی وی فوٹیج میں دیکھا جا سکتا تھا کہ کس طرح ڈرون کے ذریعے ایئرپورٹ کو نشانہ بنایا گیا۔ خبروں کے مطابق قاسم سلیمانی کے خلاف ہیل فائر مزائل کا

استعمال کیا گیا تھا ۔ اس سے قبل یہ میزائل سیریا میں استعمال کیا گیا تھا۔تفصیلات کے مطابق یہ حملہ امریکہ کی جانب سے کیا گیا تھا جس میں قاسم سلیمانی کو ان کے ساتھیوں سمیت قتل کر دیا گیاتھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں