12

قومی اسمبلی: دوسرے دن بھی شور شرابہ، اپوزیشن کا سپیکر ڈائس کا گھیراؤ

اسلام آباد: قومی اسمبلی میں دوسرے دن بھی شور شرابہ رہا، اپوزیشن ارکان نے سپیکر ڈائس کا گھیراؤ کیا اور ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ کر احتجاج کیا۔

قومی اسمبلی میں پی ٹی آئی رہنما مراد سعید کی تقریر کے دوران اپوزیشن نے نعرے باز کی۔ مراد سعید کا کہنا تھا اپوزیشن میں ہمت ہی نہیں کہ مجھے سن سکے، اپوزیشن مجھے 2 منٹ خاموشی سے سنے، انہیں آئینہ دکھا دوں گا۔ انہون نے کہا پاکستان کیخلاف زہر اگلنے والے حسین حقانی کو آپ نے سفیر لگایا تھا، حادثاتی طور پر پارٹی چیئرمین بننے والا بلاول بھارت کا مقدمہ لڑ رہا ہے، آپ نے 1200 پولیس اہلکار بھرتی کر کے بھتے پر لگائے ہوئے ہیں۔

مراد سعید کا کہنا تھا معصوم بچی غلط انجکشن لگنے سے بلک بلک کر مرگئی، معصوم بچی کی ہلاکت ان کے منہ پر طمانچہ ہے، کلبھوشن کو جاسوس کہتے انہیں شرم آتی تھی۔ انہوں نے کہا بلاول سے پوچھتا ہوں ایک سال کی عمر میں کمپنی میں پیسہ کہاں سے آیا ؟ بلاول، زرداری اور انکی پھوپھو کے نام جعلی اکاؤنٹس میں آ رہے ہیں، صدقے کے بکرے بھی جعلی اکاؤنٹس سے آ رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں