5

فیاض الحسن نے ہندوؤں سے متعلق متنازعہ ریمارکس پر معافی مانگ لی

لاہور: فیاض الحسن چوہان نے ہندوؤں سے متعلق متنازعہ ریمارکس پر معافی مانگ لی۔ انہوں نے کہا میرا ٹارگٹ قطعی ہندو مذہب اور ہندو برادری نہیں تھا، میرا مخاطب نریندر مودی، بھارتی فوج اور بھارتی میڈیا تھا، تمام اقلیتیں پاکستان کا حصہ ہیں اور ہم سب پاکستانی ہیں۔

ہندوؤں سے متعلق متنازعہ ریمارکس پر صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان کا موقف سامنے آگیا۔ انہوں نے کہا میں نے بھارتی افواج اور انڈین میڈیا کو مخاطب کیا، میرے ریمارکس سے پاکستان میں موجود ہندووں کی دل آزاری ہوئی تو معذرت خواہ ہوں، میرا مخاطب قطعی طور پر پاکستانی اقلیت ہندو کمیونٹی نہیں تھی۔

فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا جو بھی میرے وطن کی طرف میلی آنکھ سے دیکھے گا اس کو منہ توڑ جواب دوں گا، میرے خون کا آخری قطرہ بھی وطن کے لئے حاضر ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے بھی فیاض الحسن چوہان کے ریمارکس پر ناراضی کا اظہار کیا اور اسے نامناسب قرار دیدیا۔ انہوں نے دوٹوک ہدایت جاری کی کہ کسی اقلیت کے خلاف مذہبی بنیاد پر ریمارکس برداشت نہیں کئے جائیں گے۔

وزیراطلاعات پنجاب کے نازیبا ریمارکس پر پی ٹی آئی رہنماؤں اور وفاقی وزراء نے بھی سخت ردعمل کا اظہار کیا تھا۔ انہوں نے کہا پاکستان میں رہنے والے ہندؤ بھی اتنا ہی پاکستان کے حصہ ہیں جتنا ہر شہری ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں