5

‘اگر نواز شریف کو کچھ ہوا تو عمران خان، ان کی حکومت ذمہ دار ہو گی’

لاہور: قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے وزیراعظم اور حکومت کو خبردار کیا ہے کہ اگر سابق وزیراعظم نواز شریف کو کچھ ہوا تو عمران خان اور ان کی حکومت ذمہ دار ہو گی۔

سابق وزیراعلیٰ پنجاب اور مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف لاہور کی احتساب عدالت میں پیش ہوئے، جہاں سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔

لاہور کی احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے رمضان شوگر مل اور آشیانہ ہاؤسنگ ریفرنس کی سماعت کی۔

آشیانہ ہاؤسنگ ریفرنس کی سماعت کے دوران سابق وزیراعلیٰ پنجاب عدالت میں پیش ہوئے اور موقف اختیار کیا کہ میرے خلاف قومی احتساب بیورو (نیب) نے جھوٹ کا پلندہ تیار کیا ہے، جس پر عدالت نے ریمارکس دیئے کہ یہ آپ مقررہ وقت پر عدالت کو بتائیے گا یہ میرا کیس نہیں۔

اس کے بعد عدالت نے شہباز شریف کو حاضری لگانے کا کہا اور منتظم جج کی چھٹی کے باعث سماعت 27 مارچ تک کے لیے ملتوی کردی۔

بعد ازاں احتساب عدالت میں رمضان شوگر مل ریفرنس کی سماعت کے دوران جج نے حمزہ شہباز کے وکیل سے استفسار کیا کہ آپ کے موکل کیوں پیش نہیں ہوئے، جس پر حمزہ شہباز کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ان کے موکل راستے میں ہیں کچھ دیر تک پیش ہو جائیں گے۔

لاہور کی احتساب عدالت نے رمضان شوگر مل ریفرنس پر بھی سماعت 27 مارچ تک کے لیے ملتوی کر دی۔

احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے کہا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کا ایک سال پہلے دل کا آپریشن ہوا، ان کی صحت کے خراب ہے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نواز شریف کی صحت کے مسائل کو سنجیدہ نہیں لے رہی اور ساتھ ہی کہا کہ اگر نوازشریف کو کچھ ہوا تو عمران خان اور ان کی حکومت ذمہ دار ہو گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں