138

سشانت سنگھ راجپوت کی خودکشی نے بولی وڈ اور بھارت کو ہلا کر رکھ دیا تھا

گزشتہ ماہ ہی بولی وڈ کے نوجوان اداکار 34 سالہ سشانت سنگھ راجپوت نے ذہنی پریشانی اور اہم شوبز شخصیات کی جانب سے مبینہ طور پر نظر انداز کیے جانے پر خودکشی کرلی تھی . سشانت سنگھ راجپوت کی خودکشی نے بولی وڈ اور بھارت کو ہلا کر رکھ دیا تھا اور پولیس تاحال ان کی خودکشی کے معاملے کی تفتیش جاری رکھے ہوئے ہیں .

اگرچہ پوسٹ مارٹم اور اب تک کی رپورٹس سے یہ ثابت ہوچکا ہے کہ سشانت سنگھ راجپوت نے خودکشی ہی کی تھی، تاہم پولیس یہ جاننے کی کوشش کر رہی ہے کہ ایسے کیا اسباب تھے جن کی وجہ سے اداکار سنگین قدم اٹھانے پر مجبور ہوئے. جہاں تاحال سشانت سنگھ راجپوت کی خودکشی کا معاملہ سلجھ نہیں پایا تھا، وہیں ایک اور خبر نے بھارتی شوبز انڈسٹری میں ایک نئی بحث کو چھیڑ دیا. بھارتی اداکارہ وجیا لکشمی کی جانب سے ہراساں کیے جانے کی وجہ سے خودکشی کی کوشش کرنے کی خبر نے سب کو افسردہ کردیا. بھارتی اخبار انڈیا ٹوڈے کے مطابق تامل شوبز انڈسٹری کی مقبول اداکارہ وجیا لکشمی کی جانب سے اپنی زندگی کے خاتمے کی کوشش کی خبر نے سب کو پریشان کردیا اور لوگ اداکارہ کو ہراساں کرنے والی بااثر شخصیات کی گرفتاری کا مطالبہ کر رہے ہیں. رپورٹ کے مطابق نوجوان مقبول تامل اداکارہ نے خودکشی کی کوشش سے قبل اپنے فیس بک اکاؤنٹ پر چند ویڈیوز شیئر کرکے سنگین قدم اٹھانے کی وضاحت کی اور بتایا کہ کس طرح ان کی زندگی مصیبت میں ڈال دی گئی. رپورٹ کے مطابق اداکارہ نے اپنی ایک ویڈیو میں تامل ناڈو کی مقامی سیاسی جماعتوں کے دو اہم رہنماؤں

سیمان اور ہری نادر پر ہراساں کیے جانے کے الزامات عائد کیے. وجیا لکشمی نے اپنی ویڈیو میں بتایا کہ دونوں سیاسی رہنماؤں نے نہ صرف میڈیا میں ان کی تضحیک کی بلکہ وہ انہیں آن لائن ہراساں بھی کرتے رہے ہیں. اداکارہ نے الزام عائد کیا کہ دونوں بااثر رہنماؤں کی جانب سے ہراساں کیے جانے کی وجہ سے وہ شدید ذہنی اضطراب میں مبتلا ہوگئیں، جس وجہ سے اب وہ اپنی زندگی کا خاتمہ کرنے جا رہی ہیں. انڈیا ٹوڈے کے مطابق وجیا لکشمی نے ایک اور ویڈیو میں بتایا کہ انہوں نے بلڈ پریشر کم کرنے والی گولیاں کھائی ہیں، جس کے بعد اب ان کا بلڈ پریشر انتہائی کم ہوجائے گا، جس کے بعد ان کی موت واقع ہوجائے گی. ساتھ ہی اداکارہ نے ویڈیو میں حکومت، انتظامیہ اور عوام سے اپیل کی کہ انہیں ہراساں کرنے والے سیاسی رہنماؤں کے خلاف ایسی کارروائی کی جائے کہ ان کی خودکشی مثال بن جائے. اخبار کے مطابق اداکارہ کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد موقع پر انہیں گھر سے ہسپتال منتقل کیا گیا اور اب چنئی کے ایک نجی ہسپتال میں ان کا علاج کیا جا رہا ہے. تازہ رپورٹس کے مطابق اداکارہ کی حالت خطرے سے باہر ہے، تاہم اب بھی وہ ہسپتال میں زیر علاج ہیں اور مزید ایک یا دو دن تک انہیں ہسپتال میں رکھے جانے کا امکان ہے. اداکارہ کی جانب سے خودکشی کرنے کی کوشش کے بعد تامل ناڈو میں سوشل میڈیا پر لوگ حکومت سے دونوں سیاسی رہنماؤں کے خلاف ایکشن لینے کا مطالبہ کر رہے ہیں، تاہم تاحال ان کے خلاف کسی کارروائی کی کوئی اطلاعات نہیں ہیں.  

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں