7

سنچورین ٹیسٹ کا پہلا دن: پاکستان 181 پر آؤٹ، جنوبی افریقا کے 5 وکٹ پر 127 رنز

سینچورین: جنوبی افریقا کی باؤنسی وکٹ پر پہلے ہی دن 15 وکٹیں گر گئیں اور پاکستان کے 181 رنز پر آل آؤٹ ہونے کے بعد جنوبی افریقا کے بھی 5 بلے باز 127 رنز پر آؤٹ ہو گئے۔

پاکستان کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کا بیٹنگ کا فیصلہ کیا لیکن پاکستان بیٹنگ لائن افریقی فاسٹ بولرز کے سامنے ریت کی دیوار ثابت ہوئی اور پوری ٹیم پہلی اننگز میں 181 رنز بناکر آؤٹ ہوگئی۔

پاکستان کی اننگز میں سے اگر اسد شفیق کے 71 رنز کو نکال دیا جائے تو بقیہ 10 کھلاڑیوں نے مجموعی طور پر صرف 110 رنز اسکور کیے۔

پاکستان کی وکٹوں کے گرنے کا سلسلہ دوسرے اوور میں شروع ہوا جب چوتھی گیند پر امام الحق ایل بی ڈبلیو آؤٹ ہوکر بغیر کوئی رنز بنائے پویلین لوٹ گئے، انہیں کگیسو رابادا نے آؤٹ کیا۔

فخر زمان بھی 17 کے مجموعی اسکور پر 12 رنز بنا کر ڈیل اسٹین کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

تیسری وکٹ پر اظہر علی اور شان مسعود نے ٹیم کو سہارا دینے کی کوشش کی لیکن 54 کے مجموعے پر شان مسعود بھی 19 رنز بنا کر ہمت ہار گئے، چوتھے آؤٹ ہونے والے بلے باز اسد شفیق تھی جن کی اننگز 7 رنز تک محدود رہی۔

پانچویں وکٹ اظہر علی کی گری جو 36 رنز بناکر اولیور کا شکار بنے جب کہ چھٹی وکٹ کپتان سرفراز احمد کی تھی جو بغیر کوئی رن بنائے پویلین لوٹے۔

محمد عامر بھی ایک رنز بناکر اولیور کی گیند پر بولڈ ہوئے جب کہ یاسر شاہ کو 4 رنز بناکر ربادا نے ایل بی ڈبلیو آؤٹ کیا۔

نویں وکٹ کی شراکت میں بابر اعظم اور حسن علی نے جنوبی افریقی بولرز کے سامنے مزاحمت کی اور 67 رنز کی شراکت قائم کی تاہم 178 کے مجموعی اسکو پر بابر اعظم 71 رنز بناکر ربادا کا شکار بنے۔

قومی ٹیم کی آخری وکٹ 181 رنز پر گری اور شاہین آفریدی بغیر کوئی رنز بنائے پویلین لوٹ گئے۔

پاکستان کی جانب سے پہلی اننگز میں بابراعظم 71، اظہر علی 36 اور حسن علی 21 رنزبناکر نمایاں رہے۔

جنوبی افریقا کی جانب سے ڈیان اولیور نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 6، کگیسو رابادا نے 3 اور ڈیل اسٹین نے ایک وکٹ حاصل کی۔

جواب میں جنوبی افریقا کے بھی ابتدائی بلے باز مشکلات کا شکار دکھائی دیئے اور اپنی وکٹیں گنواتے رہے۔

پہلے روز کھیل کے اختتام پر جنوبی افریقا نے 5 وکٹ پر 127 رنز تھے اور ٹیمبا باووما 38 اور نائٹ واچ مین ڈیل اسٹین 13 رنز کے ساتھ وکٹ پر موجود تھے۔

پاکستان کی جانب سے محمد عامر اور شاہین شاہ آفریدی نے 2،2 جب کہ حسن علی نے ایک وکٹ حاصل کی۔

قومی ٹیم میں حارث سہیل کی جگہ شان مسعود کو شامل کیا گیا ہے، پاکستان ٹیم کپتان سرفراز احمد، فخر زمان، امام الحق، شان مسعود، اظہر علی، اسد شفیق، بابر اعظم، محمد عامر، حسن علی، یاسر شاہ اور شاہین شاہ آفریدی پر مشتمل ہے۔

ڈیل اسٹین جنوبی افریقا کی جانب سے سب سے زیادہ وکٹیں لینے والے بولر بن گئے

میزبان ٹیم پاکستان کے خلاف 4 فاسٹ بولرز کے ساتھ میدان میں اتری ہے، پروٹیز ٹیم ایڈن مرکرم، ڈین ایلگر، کپتان فاف ڈوپلیسی، ہاشم آملہ، ڈی بریون، ٹیمبا باووما، کوائنٹن ڈی کوک، کیشو مہاراج، کگیسو رابادا، ڈیل اسٹین اور ڈین اولیور پر مشتمل ہے۔

پاکستان ٹیم اب تک جنوبی افریقا میں کوئی ٹیسٹ سیریز اپنے نام نہیں کرسکی اور گزشتہ 10 سال کے دوران پاکستان نے پروٹیز سرزمین پر کوئی ٹیسٹ میچ نہیں جیتا۔

قومی ٹیم کے پاس جنوبی افریقا کو شکست دینے اور ایک دہائی پرانی ناکامی کی روایت کو توڑنے کا سنہری موقع ہے، جنوبی افریقی ٹیم اے بی ڈویلئرز کے بغیر میدان میں اتری ہے جب کہ اس کے پاس اہم فاسٹ بولر ورنن فلینڈر اور لنگی نگیڈی بھی موجود نہیں جو انجری کے باعث آج کا میچ نہیں کھیل رہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں